Tuesday, May 28
Shadow

Tag: مرحا شہباز

کاغذ کے پھول تحریر: مرحا شہباز

کاغذ کے پھول تحریر: مرحا شہباز

افسانے
تحریر: مرحا شہباز ”ارے سرخ آنکھیں لیے ہر صبح کہاں سے آ جاتی ہو؟“ سوالات کی بوچھاڑ لیے ایک نٸ صبح فاریہ کی منتظر تھی۔ پل پل تنہا ئی میں سِسَکنا اور تخیل میں ایک ہی چہرہ بناتے رہنا، زندگی کا حقیقی مقصد فاریہ سے دور کرتا جا رہا تھا۔ وہ خلا کو تکتے بولی: ”کھونے کا درد تم کہاں جانو۔ بس وہ جانیں جن پر زوال کا یہ دل شکن دور آتا ہے۔“ ”ہوش میں آٶ فاریہ کہ کھونے اور چلے جانے میں زمین آسمان کا فرق ہے۔ کیوں اُس کے لیے دُکھیاری ہوٸی پڑی ہو جو خود گیا ہے۔“ سوچوں میں محو ذہن شعور کے مراحل طے کر رہا تھا سو وہ عالمِ سکوت کی باادب مسافرہ رہی۔ مگر کبھی کچھ بول بھی دیتی۔ ”نۓ لباس زیب تن کیوں نہیں کرتی؟“ نرمی سے پوچھا گیا۔ ”سب عزت کا پیرہن چاک کر دیتے ہیں، سو جی نہیں چاہتا۔“ کرچی کرچی وجود کے پیوند عیاں ہونے لگے۔ ”ہنسا کرو تاکہ درد میں افاقہ ہو۔“ اُسے سمجھایا گیا۔ ”ہنسنا درد بڑھاتا ہے۔ دل مزید مارتا ہ...
×

Send a message to us on WhatsApp

× Contact