Friday, May 24
Shadow

۔اندھیرا ساتھ دیتا ہے۔ شاعر عبدالحفیظ شاہد۔

شاعر عبدالحفیظ شاہد۔

“اندھیرا  ساتھ دیتا ہے”

تمہیں گر یاد ہو صاحب؟

کہ ہم نے تُم کو جیون کے سبھی رنگوں کے میلے سے

افضل رنگ جانا تھا

تمھیں  ہی    اپنا  مانا  تھا

یہ ہم نے چاہا تھا صاحب  ،تمھیں   ہم ساتھ رکھیں گے

بھلے مِٹنا بھی  پڑ  جائے ،      تمھیں آباد  رکھیں گے

تِری آنکھوں کے سپنوں کو سدا شاداب رکھیں گے

تمھیں  جیون کے دکھوں پر کبھی  رونے نہیں دیں گے

بھلے  کچھ بھی  ہو جائے تمہیں  کھونے  نہیں  دیں گے

یہ ہم نے چاہا تھا صاحب

تِری راہوں کو چاہت کے اُجالوں سے سجائیں گے

جہاں تیرے قدم ہوں گے، وہاں پلکیں بچھائیں گے

 مگر   اب ہم نے  جانا  ہے

یہی  اب  دِل نے  مانا  ہے

وہ  چاہت پیار  کی  باتیں

وہ  سب  اِقرار  کی  باتیں

وہ  وقتی  جوش  تھا  صاحب۔

ہمیں کب ہوش تھا صاحب؟

حسیں آنکھوں کی چلمن میں کوئی آنسو سجائے کیوں ؟

ہمارے واسطے  صاحب  کوئی  دل  کو  جلائے کیوں ؟

یہی  اِک  کڑوا  سچ  صاحب

اُجالا  ساتھ  دے  نہ  دے

اندھیرا  ساتھ  دیتا  ہے

اندھیرا  ساتھ  دیتا  ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

×

Send a message to us on WhatsApp

× Contact