Sunday, May 26
Shadow

طاقت کے دیوتا کے نام ۔ ادیبہ انور

ادیبہ انور
اس  آہنی بدن کی در و دیوار میں
ایک آبگینہ ہے نازک سا
اے طاقت کے دیوتا
تو آہستہ اسے پکڑ
ذرا احتیاط سے بات کر
تیرے ہاتھوں سے یہ مجسمہ ٹوٹتا نہیں مگر
تیرے لفظوں کے وار سے
تیرے لہجے کی سختی سے
آبگینہ جب چور ہو کر بکھرتا ہے
تو
تیری لمحوں کی محبت
ان کر چیوں کو جوڑ نہیں پاتی
ان نازک آبگینوں کے
آہنی بدن پر نہ جا
اے طاقت کے دیوتا
ابھی کل ہی کی بات ہے
یہ آہنی بدن
کسی دیوتا کے گھر کی کلی تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

×

Send a message to us on WhatsApp

× Contact