Friday, April 19
Shadow

ڈیجیٹل دور میں روایتی کتابوں کی اہمیت / ارشدقلمی

ارشد  قلمی

آج کے ڈیجیٹل دور میں ٹیکنالوجی ہماری روزمرہ کی زندگی کا ایک جزو بن گئی ہے۔ ٹیکنالوجی کی ترقی نے لوگوں کے پڑھنے اور معلومات تک رسائی کے طریقے میں ایک کلیدی تبدیلی لائی ہے۔ ای-کتابیں، آن لائن مضامین اور آڈیو بکس دن بدن مقبول ہوتے جا رہے ہیں، جس کی وجہ سے کئی لوگ یہ خیال کرتے ہیں کہ روایتی کتابوں کا وقت گزر گیا ہے۔ لیکن، یہ بات بالکل درست نہیں ہے۔ روایتی کتابوں کی اہمیت آج بھی بہت بڑی ہے اور آج کی معاشرت میں ان کا اہم کردار ہے۔ 

روایتی کتابوں کا ایک اہم فائدہ یہ ہے کہ یہ قارئین کو معلومات کی یاداشت کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔ کئی تحقیقات نے ثابت کیا ہےکہ ڈیجیٹل آلات کے مقابلے روایتی کتابوں سے پڑھنے سے معلومات کی سمجھ اور یاداشت کے لحاظ سے بہترین نتائج حاصل ہوتے ہیں۔ ناروے کے اسٹیوینجر یونیورسٹی کے تحقیق کاروں کی ایک تحقیق کے مطابق، وہ شرکاء جو روایتی کتابوں سے پڑھتے تھے انہوں نے ای-کتابوں سے پڑھنے والوں سے زیادہ معلومات یاد رکھے تھے۔ یہ تحقیق بتاتی ہے کہ کتاب کو پکڑ کر اس کے صفحات کو پلٹنا، قارئین کو پڑھی ہوئی مواد کے بارے میں ایک  مینٹل میپ بنانے میں مدد دیتا ہے۔ دیگر فوائد کے علاوہ ، روایتی کتابوں کا ایک اور فائدہ یہ ہے کہ یہ آنکھوں کی تھکن کو کم کرتے ہیں۔ کمپیوٹرز ، ٹیبلٹس اور سمارٹ فون جیسے ڈیجیٹل آلات سے پڑھنا آنکھوں میں تھکن اور بے چینی کا باعث بن سکتا ہے۔  ڈیجیٹل آلات کے بلیو لائٹ جاری کرتے ہیں ، جو آنکھوں کے لیے نقصان دہ ہو سکتا ہے۔ دوسری طرف ، روایتی کتابیں کسی قسم کی نقصان دہ روشنی نہیں جاری کرتی ہیں ، اس لئے یہ پڑھنے سے انسان جسمانی طور پر بھی محفوظ رہتے ہیں۔ رسمی کتابوں کا تعلیم کے فروغ میں اہم کردار ہے، خاص طور پر بچوں میں۔ متعدد مطالعات نے ثابت کیا ہے کہ گھر پر جس طرح رسمی کتابیں دستیاب ہوتی ہیں ان کے ذریعے بچے مطالعے کی عادتیں پیدا کرتے ہیں، جس سے ان کی تعلیمی صلاحیت میں سرگرمی پیدا ہوتی ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق جو ملوانی کی نیشنل لٹریسی ٹرسٹ نے کی تھی، گھر پر رسمی کتابیں دستیاب ہونے والے بچے عام  بچوں سے بہتر مطالعے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اس تحقیق سے یہ بھی پتا چلا کہ جو بچے مطالعہ سے لطف اندوز ہوتے ہیں وہ تعلیمی حصول کے لحاظ سے بھی بہتر نتائج حاصل کرتے ہیں۔ روایتی کتابوں کی ایک اہم خصوصیت یہ ہے کہ یہ ایک حقیقی تجربہ فراہم کرتے ہیں۔ ایک حقیقی کتاب پکڑنا، اس کے صفحات پلٹنا، اور اس کے صفحات کی خوشبو یاداشت اور جذابیت کی ایک حسی بنا سکتے ہیں۔ یہ پڑھنے والوں کو ان کی پڑھی ہوئی مواد سے مزید گہری رابطہ پیدا کرنے میں مدد کر سکتی ہے۔ روایتی کتابیں تاریخ کے حفاظت میں بھی اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ بہت سے تاریخی دستاویزات اور کتابیں صرف روایتی شکل میں دستیاب ہیں، جنہیں قیمتی آثار سمجھا جاتا ہے۔ یہ کتابیں صرف تاریخی تحقیقات کے لئے ہی نہیں بلکہ ثقافتی وراثت کی حفاظت کے لئے بھی اہم ہیں۔

علاوہ ازیں، روایتی کتابیں قائم مقامیت اور مضبوطیت کا احساس بھی پیدا کرتی ہیں۔ جبکہ ڈیجیٹل مواد کو آلہ کی خرابی یا ناقص ہونے کی وجہ سے ضائع کیا جاسکتا ہے، اس کے برعکس، روایتی کتابیں نسلوں تک باقی رہ سکتی ہیں اور ورثے کے طور پر وارثوں کو دی جاسکتی ہیں۔ خصوصاً کتابوں جن کے پاس واجب الوصول یا تاریخی قدر ہوں۔ یہ کتابیں خلاقی اور تحقیقی سوچ کی صلاحیتوں کو بھی بڑھاتی ہیں۔ برکلی کے یونیورسٹی کی ایک مطالعہ کے مطابق، روایتی کتابوں کے پڑھنے سے دماغ کے نیورل راہوں کو بہتر بنایا جا سکتا ہے جو خلاقی سوچ اور مسئلوں کے حل کے ساتھ منسلک ہوتے ہیں۔ اس سے یہ بھی اظہار کیا جاسکتا ہے کہ روایتی کتابوں کو پڑھنے سے اعصابی ترقی پر مثبت اثرات ہوسکتے ہیں۔ روایتی کتابیں ایسی خصوصیات فراہم کرتی ہیں جو ڈیجیٹل آلات نہیں پیدا کر سکتیں۔ کسی خاموش جگہ پر ایک کتاب پڑھنے سے پڑھنے والے کو دنیا کی توجہ کی تناؤ سے علیحدہ کرنے اور پڑھنے میں غوطہ لگانے کا موقع ملتا ہے۔ یہ شخصی اور نجی تجربہ پیدا کرتی ہیں جو ڈیجیٹل آلات کے ساتھ پانا مشکل ہوتا ہے۔ روایتی کتابوں کا ایک اہم کردار احساسِ ترجمانی اور سماجی خصوصیات کے فروغ میں ہے۔ دوسروں کے ساتھ روایتی کتابوں کو پڑھنا، جیسے بک کلب یا کلاس روم کے اندر، بحث اور گفتگو کی اجازت دیتا ہے جو مختلف نقطہ نظر اور تجارب کی بہتر سمجھ کے لئے کام آ سکتے ہیں۔

اس کے علاوہ روایتی کتابیں زبان سیکھنے کے لئے ایک ضروری ذریعہ ہیں۔ جس طرح کہ ماحول میں زندگی کے دوران زبان سیکھنے کے لئے زبان استعمال کرنا ضروری ہوتا ہے، اسی طرح کتابیں پڑھنا زبان سیکھنے کے لئے بہترین ذریعہ ہے۔ ایک تحقیق جو جریدہ لینگویج لرننگ کے جریدہ مجلہ میں شائع ہوئی، کہتی ہے کہ روایتی کتاب پڑھنا دیجیٹل ٹیکسٹ پڑھنے سے زبان سیکھنے کے لحاظ سے زیادہ فعال ہے۔ یہ تحقیق یہ بھی پیش کرتی ہے کہ روایتی کتاب پڑھنے سے زبان اور دائرہ لغات کی وسیع معلومات کو بڑھاتی ہے ۔

آج کی دنیا میں ڈیجیٹل آلات کی مقبولیت کے باوجود روایتی کتابوں کی بہت اہمیت ہے۔ اس لئے ضروری ہے کہ ڈیجیٹل دور میں روایتی کتابوں کے استعمال کو بڑھاوا دیا  جائے اور ان کی حفاظت کی جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

×

Send a message to us on WhatsApp

× Contact